Wednesday, January 19, 2022
spot_imgspot_imgspot_imgspot_img
Homeپاکستانحکومت نے 16 ہزار برطرف ملازمین کی بحالی کی تجاویز پیش کردیں

حکومت نے 16 ہزار برطرف ملازمین کی بحالی کی تجاویز پیش کردیں

اسلام آباد(این اے نیوز) اٹارنی جنرل نے برطرف ملازمین سے متعلق تجاویز عدالت میں پیش کر دیں۔سپریم کورٹ میں 16 ہزار برطرف ملازمین کی بحالی کے کیس کی سماعت ہوئی۔وفاقی حکومت نے ملازمین کی بحالی سے متعلق تجاویز عدالت میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ 1 تا 7 گریڈ تک کے ملازمین کو بحال کر دیا جائے، گریڈ 8 تا 17 تک ملازمین کو پبلک سروس ٹیسٹ سے گزرنا ہو گا، یہ عمل تین ماہ میں مکمل ہو گا، ملازمین کی ماضی کی سروس ایڈ ہاک تصور ہو گی، جو ملازمین ریٹائر ہو گئے یا جن کا انتقال ہوگئے ، انکے معاملات ماضی کا حصہ تصور کیے جائیں گے۔تجاویز میں کہا گیا کہ دوران ملازمت انتقال کرنے والے ملازمین اور انکے ورثا پینشن کے حقدار نہیں ہونگے۔ گریڈ 8 سے 17 تک کے ملازمین کے تین ماہ میں ٹیسٹ لیے جائیں گے، فیڈرل پبلک سروس کمیشن کا ٹیسٹ پاس کرنے والے ملازمین کو مستقل کر دیا جائے گا۔
حکومتی تجاویز میں کہا گیا کہ جو ملازمین بحال ہوتے ہی پنشن لے رہے ہیں انہیں مزید پنشن نہیں ملے گی، ملازمین کو جو رقم دی جا چکی وہ ریکور نہیں کی جائے گی، تین ماہ میں فیڈرل پبلک سروس کمیشن ملازمین کے ٹیسٹ کا عمل مکمل کرے گا، جب تک ملازمین کو ایڈہاک تصور کیا جائے گا۔اٹارنی جنرل نے بتایا کہ وزیراعظم سے مشاورت کرکے تجاویز عدالت کو دے رہا ہوں۔ جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ تجاویز پر غور کرکے کل اپنی رائے دینگے۔سپریم کورٹ نے سماعت کل تک ملتوی کردی۔ برطرف ملازمین بحال ہونگے یا نہیں سپریم کورٹ اہم ترین فیصلہ کل سنائے گی۔

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -spot_img

Most Popular

Recent Comments