0

پانچ گھنٹے سے کم نیند ڈپریشن کے خطرات میں اضافہ کرتی ہے

ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ معمول کے مطابق رات کو پانچ گھنٹے سے کم دورانیے کی نیند کا لیا جانا ڈپریشن کے خطرات میں اضافہ کر سکتا ہے۔محققین یہ بات کافی عرصے سے جانتے ہیں کہ خراب ذہنی صحت نیند کے مسائل کا سبب ہوتی ہے۔ لیکن 7000 سے زائد افراد پر کیے جانے والے ایک تجزیے سے سائنس دانوں کو معلوم ہوا ہے کہ خراب نیند ڈپریشن کی علامات کا سبب بنتی ہے۔یونیورسٹی کالج لندن کے ماہرین کے مطابق ڈیٹا یہ بتاتا ہے کہ وہ افراد جو پانچ گھنٹوں سے کم کی نیند لیتے ہیں ان کے اس کیفیت میں مبتلا ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔تحقیق کی سربراہ مصنفہ اوڈیسا ہیملٹن کا کہنا تھا کہ مطلوبہ مقدار سے کم نیند کے دورانیے اور ڈپریشن کے درمیان معاملہ انڈے اور مرغی جیسا ہی ہے۔ یہ کیفیات ایک ساتھ پیش آتی ہیں لیکن کونسی کیفیت پہلے پیش آتی ہے یہ معلوم نہیں۔محققین نے تحقیق میں 60 کی دہائی میں موجود 7146 افراد کے جینیاتی اور صحت کے ڈیٹا کا جائزہ لیا۔یہ تجزیہ ان افراد کی جینیات کی خصوصیات پر مبنی تھا۔ گزشتہ چند سالوں میں نیند کے ماہرین کو کچھ ایسے انوکھے ڈی این اے دیکھیں ہیں جن کا تعلق لوگوں کے نیند کے دورانیے سے ہوتا ہے۔تحقیق کے نتائج میں بتایا گیا کہ وہ افراد جن کے جینیات میں پانچ گھنٹے کی کم نیند کی وجہ سے تبدیلی واقع ہوئی تھی ان میں آئندہ چار سے 12 سال میں ڈپریشن کے امکانات 2.5 گُنا زیادہ آتا ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں