0

علیزہ سلطان سابقہ شوہر فیروز خان کے حق میں بول پڑیں

معروف اداکار فیروز خان کی سابقہ اہلیہ علیزہ سلطان سوشل میڈیا پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے اپنے سابقہ شوہر کے حق میں بول پڑیں۔گزشتہ سال فیروز خان اور علیزہ سلطان کی طلاق کے بعد، اداکار کی سابقہ اہلیہ نے کراچی کی مقامی عدالت میں اپنے بچوں کے مالی اخراجات کے حوالے سے درخواست دائر کی تھی، عدالت نے علیزہ کی درخواست پر فیصلہ سُناتے ہوئے کہا تھا کہ فیروز خان ماہانہ 80 ہزار روپے اپنے بچوں کے مالی اخراجات کے لیے ادا کرنے کے پابند ہیں۔عدالت کے فیصلے کے کچھ عرصہ بعد ہی سوشل میڈیا پر افواہیں سامنے آئی تھیں کہ فیروز خان اپنے بچوں کے مالی اخراجات ادا نہیں کررہے جس کی وجہ سے علیزہ سلطان کو کمانا پڑ رہا ہے۔اب سوشل میڈیا سائٹ انسٹاگرام پر علیزہ سلطان نے اپنے مداحوں کے لیے سوال و جواب کا ایک سیشن رکھا جس میں ایک مداح نے پوچھا کہ ‘کیا یہ سچ ہے کہ فیروز خان اچھے باپ نہیں ہیں؟ اور وہ اپنے بچوں کے مالی اخراجات ادا نہیں کررہے؟’مداح کے سوال کا جواب دیتے ہوئے علیزہ سلطان نے کہا کہ ‘یہ سچ نہیں ہے، فیروز خان بچوں کے مالی اخراجات کی آدھی ذمہ داری اُٹھا رہے ہیں’۔ایک مداح نے سوال کیا کہ ‘جب آپ غصہ ہوتی ہیں تو حالات کو کیسے قابو میں کرتی ہیں؟’اس سوال پر علیزہ سلطان نے جواب دیا کہ ‘باتیں سُنا کے’۔سوال و جواب کے سیشن میں ایک اور مداح نے سوال کیا کہ ‘آپ کا زندگی میں سب سے بڑا پچھتاوا کیا ہے؟ جس پر علیزے نے کہا کہ ‘الحمدللہ! مجھے کوئی پچھتاوا نہیں کیونکہ زندگی میں جو بھی ہوتا ہے، اللہ کی رحمت کا حصہ ہوتا ہے’۔علیزہ سلطان سے ایک مداح نے پوچھا کہ ‘آپ اپنی زندگی میں کیا تبدیلی چاہتی ہیں؟ اس سوال پر علیزہ نے جواب دیا کہ ‘میں اپنی زندگی میں صبر کرنا، لوگوں کو معاف کرنا، دین اور دنیا میں توازن قائم رکھنا، اچھے اور برے تجربات سے سیکھنا اور رشتوں میں توازن پیدا کرنا چاہتی ہوں’۔اُنہوں نے کہا کہ ‘میں گھر سے باہر جاتی ہوں تو میرے سر پر دوپٹہ ہوتا ہے، میں اب چاہتی ہوں انسٹاگرام پر وہی تصاویر پوسٹ کروں جن میں میرے سر پر دوپٹہ ہو’۔خیال رہے کہ علیزہ سلطان اور فیروز خان 2018 میں رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے تھے، اس جوڑے کے ہاں 2019 میں پہلے بیٹے سلطان جبکہ فروری 2022 میں بیٹی فاطمہ کی پیدائش ہوئی تھی۔تاہم دو بچوں کی پیدائش کے بعد اس جوڑی نے راہیں جدا کرتے ہوئے ستمبر 2022 میں طلاق لے لی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں