0

عام انتخابات 90 دن میں نہیں ہو سکتے، الیکشن کمیشن

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے کہا ہے کہ 90 روز میں عام انتخابات نہیں ہوسکتے جبکہ نئی مردم شماری کے تحت حلقہ بندیوں کا کام چار ماہ میں مکمل کرلیا جائے گا۔چیف الیکشن کمشنر سلطان سکندر راجہ کی زیر صدارت الیکشن کمیشن کا اجلاس ہوا، جس میں آئندہ عام انتخابات اور نئی مردم شماری کے بعد کی صورت حال پر تبادلۂ خیال کیا گیا۔اجلاس میں انتخابی حلقہ بندیوں کا کام چار ماہ میں مکمل کرنے کا فیصلہ کیا گیا، جس پر کام آج سے ہی شروع ہوجائے گا۔ترجمان نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے نئی حلقہ بندیاں کرانے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے لیے شیڈول کا نوٹیفیکشن بھی جاری کر دیا گیا ہے، نئی حلقہ بندیوں کیلئے صوبائی حکومتوں اور ادارہ شماریات سے معاونت طلب کرلی جبکہ متعلقہ حکام کو نئی حلقہ بندیوں کے حوالے سے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق حلقہ بندیاں 14دسمبر کو مکمل ہوں گی جبکہ پرانی حلقہ بندیوں کو منجمند کر دیا گیا ہے۔اعلامیے کے مطابق 21 اگست کو چاروں صوبوں اور اسلام اباد کے لئے کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی، یکم سے 4 ستمبر تک حلقہ بندیوں کمیٹیوں کو ٹریننگ دی جائے گی۔ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق حلقہ بندیوں کی ابتدائی فہرست 9 اکتوبر کو شائع کی جائے گی جبکہ 10 اکتوبرتا 8 نومبر حلقہ بندیوں پراعتراضات عائد کئے جا سکیں گے، 10 نومبر سے 9 دسمبر تک حلقہ بندیوں پر اعتراضات دورکئے جائیں گے جس کے بعد 14 دسمبر 2023ء کو حلقہ بندیوں کی حتمی فہرست شائع کی جائے گی۔الیکشن کمیشن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ حلقہ بندیوں پر آج 17 اگست سے باقاعدہ کام شروع کردیا گیا ہے۔اسلام آباد کے بیورو چیف کے مطابق عام انتخابات 25 فروری 2024ء یا تین مارچ 2024ء تک ہوسکتے ہیں۔ چار ماہ میں حلقہ بندیوں کا کام مکمل ہونے کے فوری بعد انتخابی شیڈول جاری کردیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں